اہم سوال و جواب


* ’’این اے‘‘ کی میٹینگیں کیسی ہوتی ہیں؟
جب دو یا اس سے زیادہ نشے سے بحالی کے خواہش مند آپس میں ملتے ہیں اور ایک دوسرے کی بحالی میں مدد کرتے ہیں تو اسے ’’این اے‘‘ کی میٹنگ کہا جاتا ہے۔
باقاعدہ طور پر ’’این اے‘‘ میٹینگیں طے شدہ پروگرام کے مطابق منعقد کی جاتی ہیں۔ ان میٹینگوں میں مختلف پس منظر لیکن یکساں بیماری میں مبتلا ساتھی شریک ہوتے ہیں اور ایک دوسرے کیلئے عزم و ہمت اور امید کی کرنیں بکھیرتے ہیں۔ وہ اپنے تجربات بیان کرتے ہیں۔ جس سے سب کو راہنمائی ملتی ہے۔ یہیں نشے سے بحالی پانے والے تعلقاتِ عامہ اور آپس میں خوش خلقی سے ملنے کے طریقے سیکھتے ہیں۔ احساس ذمہ دار ی اور معقول رویوں کی تربیت بھی یہیں ہوتی ہے۔ ’’این اے‘‘کی میٹنگ ایک ایسے قبیلے کی طرح ہوتی ہے جس میں نہ صرف باہمی میل جول کی پیاس مٹتی ہے بلکہ نشانہ بنے بغیرنشے کے خلاف کامیاب جدوجہد کی جاتی ہے۔ شرکاء ایک دوسرے کیلئے آئینے کا کام دیتے ہیں اور ایک دوسرے کی غلطیوں سے سیکھتے ہیں۔
جس طرح نشہ کرنے والوں کی صحبت میں نشے کے مریض بنتے ہیں اسی طرح نشہ چھوڑنے والوں کی محفلوں میں اُس بیماری سے شفاء ملتی ہے۔ لوہا، لوہے کا توڑ ہوتا ہے۔

* ’’این اے‘‘ کی انجمنیں کیسی چلتی ہیں؟
’’این اے‘‘ کی انجمن بہت کچھ دیتی ہے لیکن واپسی میں کچھ زیادہ نہیں مانگتی۔ مزے کی بات یہ ہے کہ اس کا رکن بننے کیلئے شرط صرف یہ ہے کہ آپ کے دل میں نشہ چھوڑنے کی تمنا ہو۔ کوئی فیس نہیں۔ ہاں! چندے کا رواج ہے لیکن وہ بھی رضاکارانہ۔ کسی کو مجبور نہیں کیا جاتا۔ حتیٰ کہ بڑی رقم کا چندہ بھی نہیں لیا جاتا تاکہ کوئی اُس کی آڑ میں میٹنگ پر اثر انداز نہ ہو۔ یہ چندہ جگہ کے کرائے، لٹریچر اور چائے وغیرہ کیلئے استعمال کیا جاتا ہے۔ انجمن میٹنگ کیلئے کوئی بھی ایسی جگہ استعمال کرتی ہے جو سستی ہو اور آسانی سے مل سکے۔

* ’’این اے‘‘کے پروگرام میں شمولیت کیسے ممکن ہے؟
سب سے پہلے ’’این اے‘‘ کی میٹنگوں میں شرکت ضروری ہے۔ یہاں آپ کو بولنے پر مجبور نہیں کیا جائے گا۔ لیکن عملی طور پر آپ کو فائدہ تب ہی ہو گا جب آپ بولنا شروع کریں گے۔ جلد ہی آپ کو احساس ہونے لگے گا کہ آپ جتنی ایمانداری سے اپنے دل کا کہیں گے اتنی ہی جلدی شفاء پائیں گے۔ میٹنگوں میں شرکت کے ساتھ ہی یہ بھی ضروری ہے کہ بارہ قدموں کے پروگرام پر مبنی لٹریچر کا مطالعہ شروع کر دیا جائے۔
پروگرام سے فائدہ اُٹھانے کیلئے یہ بھی ضروری ہے کہ آپ راہنما بنائیں اور اُس سے مل کر بارہ قدموں پر کام کریں۔ بحالی پانے کے بعد کسی کا راہنما بن کر یہ قرض اتارنا بھی ضروری ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ پروگرام کی روایتوں کے مطابق نشے کے مریضوں کی خدمت کرتے رہنا اپنے لئے بحالی کی ضمانت ہے۔

* راہنما میں کیا خصوصیات ہونی چاہئیں؟
پروگرام میں راہنما چننا بحالی کا لازمی حصہ ہے۔ یہ راہنما ہی ہے جس کی طرف آپ کسی بھی بحران میں رجوع کرتے ہیں۔ راہنما کوئی بھی ایسا شخص ہو سکتا ہے جو نشے سے بحالی میں آپ سے آگے ہو، آپ کے مسائل کو سمجھتا ہو، ٹھنڈے دل سے راہنمائی کر سکتا ہو۔ راہنما چنتے ہوئے ایک سادہ سا نظریہ یہ ہے کہ وہ سب کچھ حاصل کر چکا ہو جسے حاصل کرنے کی تمنا آپ کے دل میں ہے۔ سب سے بڑی بات یہ ہے کہ وہ راہنما بننے پر راضی ہو۔ روشن خیال ہو، آپ پر گرفت کرنے کے قابل ہو اور آپ اُس پر اعتماد کر سکیں۔
راہنما چننا اہم ہے لیکن اس سے بھی اہم بات یہ ہے کہ راہنما سے فائدہ کیسے اُٹھایا جائے؟ رسمی طور پر کسی کو راہنما بنا کر بھول جانے سے کوئی فائدہ نہ ہو گا۔ مضبوط رابطہ ہی راہنما کی افادیت کو اجاگر کرے گا۔ میٹنگوں میں اکٹھے شرکت کے علاوہ اکثر ملاقاتیں اور ٹیلی فون پر رابطہ اُس رشتے کو مؤثر بنا سکتا ہے۔
 

 

Contact Us

Got a question ? Write it down, right here; and we will reply within 24 hours.


Dear Dr. Sadaqat Ali,