اہم سوال و جواب


* عجیب خیال ہے! یہ کیسی الرجی ہے؟
الرجی کا مطلب ہے غیر معمولی ردِ عمل۔ نشے کے معاملے میں جسم کا نارمل ردِ عمل یہ ہے کہ کوئی جتنا نشہ کرے اتنا اثر ہو۔ اگر کوئی شخص نشہ کرے اور اس پر اثر نہ ہواور وہ مزید نشے کیلئے تڑپتا رہے تو ہم کہیں گے کہ اس کے جسم نے نشے کو ضائع کرنا شروع کردیاہے۔ جسم کا یہ درِ عمل نارمل نہیں ہے۔ نشے کی بیماری کی بنیاد یہی ہے۔

*کیا نشے کی بیماری اورذیابیطس میں مماثلت ہے؟
جی ہاں! ان دونوں بیماریوں میں کافی مماثلت ہے۔ صحت مند آدمی چینی سے توانائی حاصل کرتا ہے جبکہ ذیابیطس کا مریض تکلیفیں! دراصل ذیابیطس کے مریض کے جسم میں چینی سے نمٹنے کا نظام درہم برہم ہوجاتا ہے۔ نشہ کرنے والا نشے کا مریض بنتا ہی تب ہے جب اس کے جسم میں نشے سے نمٹنے کا نظام درہم برہم ہوجاتا ہے۔ پھر نشہ اس پر ایسے اثر نہیں کرتاجیسے کیا کرتا تھا۔ جبکہ شوگر کا مریض ادویات اور پرہیز کی مدد سے نشاستے سے نباہ کرنا سیکھ لیتاہے۔ بحرحال یہ تو طے ہے کہ کوئی نشے کا مریض کسی طرح بھی نشے کے ساتھ نباہ کرنا نہیں سیکھ سکتا۔ دونوں امراض میں جسم میں آنے والی یہ تبدیلی مستقل نوعیت کی ہے۔

* نشے کا مرض کب اور کیسے ظاہر ہوتا ہے؟
کوئی نشہ کرنے والا زندگی میں کسی بھی مرحلے پر آہستہ آہستہ یا ایک دم نشے کا مریض بن سکتا ہے اور اس بات کا پہلے سے تعین نہیں کیا جاسکتا کہ ایسا کب ہوگا؟ جب کسی کا جسم نشے کا اثر قبول کرنے سے پہلے ہی ضائع کرنے لگے تو یہ مرض کی ابتدا ہے۔ انتہا یہ ہے کہ مریض چاہئے کتنا بھی نشہ کرے اور اس کی طلب پوری نہیں ہوتی۔ اب وہ جسم کی وجہ سے نشہ نہیں کرسکتا اور دماغ کی وجہ سے نشہ چھوڑ نہیں سکتا۔ نشے کی بیماری کے یہ دو پاٹ ہیں جن کے بیچوں بیچ مریض پستاہے۔ چونکہ مریض نہیں جانتا کہ اب وہ پہلے کی طرح کنٹرول کے ساتھ نشہ نہیں کرسکتا اس لئے وہ کوشش جاری رکھتا ہے۔

* نشے کا آغاز کیسے ہوتا ہے؟
نشے کا آغاز زیادہ تر نشہ کرنے والوں کی صحبت میں ہوتا ہے۔ہاں!ان کی صحبت میں جانے کی وجوہات ان گنت ہوسکتی ہیں۔ یہیں نشے کی دعوت ملتی ہے جو اس لئے قبول کی جاتی ہے کہ نشہ ’’کام آتا‘‘ہے۔ پھر اس کا چسکا پڑجاتا ہے۔ ’’خرابی‘‘ کی اصل جڑوہ لوگ ہیں جو نشہ کرتے ہیں لیکن نشے کے مریض نہیں ۔ ان میں سے اکثر تو معاشرے کے کامیاب لوگ ہوتے ہیں۔ انہیں دیکھ کر ہی نئے لوگ بے دھڑک اس میدان میں کود پڑتے ہیں۔ نشے کے مریضوں کی منڈلی میں تو ایسا شخص جاتا ہی نہیں جو نشے سے آشنانہیں ہوتا۔

* لوگ نشے کا انتخاب کیسے کرتے ہیں؟
لوگ اپنی مخصوص’’ڈیمانڈ‘‘ کے مطابق ایک نشے کا آغاز کرتے ہیں۔ جب وہ نشہ بے اثر ہوجائے تو تیز سے تیز تر نشے کی تلاش میں آگے بڑھتے چلے جاتے ہیں۔ بعض اوقات ایک سے زیادہ نشے ملا کر بھی کرتے ہیں۔

 

Contact Us

Got a question ? Write it down, right here; and we will reply within 24 hours.


Dear Dr. Sadaqat Ali,