اہم سوال و جواب


* پھر ہیروئن کے مریض کیوں زیادہ ہیں؟
زیادہ تر ہیروئن کے مریض وہی ہیں جو پہلے چرس یا شراب کے مریض تھے۔ کچھ ہی مریض ہیروئن کا براہ راست استعمال شروع کرتے ہیں۔ نشے کی بیماری کا قانون ہے کہ ہیروئن کا عادی واپس شراب یا چرس پر نہیں آ سکتا۔ چونکہ ہمارے ملک میں ہیروئن سے تیز نشہ موجود نہیں، اس لئے تمام نشوں کے مریض سفر کرتے کرتے آخر کار ہیروئن پر آ کر ٹھہر جاتے ہیں حالانکہ شراب کا نشہ کرنے والوں میں صرف دس فیصد مریض بنتے ہیں۔ پھر بھی امریکہ میں کروڑوں شرابی ہیں۔

* نشہ کرنے کی وجوہات کیا کیا ہیں؟
دنیامیں جتنے لوگ نشہ کرتے ہیں اتنی ہی نشہ کرنے کی وجوہات ہیں۔ چند خاص وجوہات گھریلو ناچاقی، جنسی کمزوری، ڈپریشن، عشق میں ناکامی، خرابی صحت، بیروزگاری، بوریت اور ٹینشن ہے۔ ان وجوہات کی بنا پر کوئی شخص نشہ کر سکتا ہے لیکن یہ ثابت نہیں ہوتا کہ ان حالات میں سبھی لوگ نشہ ضرور کریں گے۔بہت سے لوگوں کیلئے تو ایسے حالات نشے کی بیماری کے بعد پیدا ہوتے ہیں ۔

* نشہ باز کو نشے سے کیا ملتا ہے؟
شراب سے حیا جاتی رہتی ہے اور بے حیائی کا مزہ ملتاہے۔ آخر کا رجگر چھلنی ملتا ہے۔ سستی اور نامردی ملتی ہے۔ چرس سے خیالات میں بے خیالی ملتی ہے اورپاگل پن ملتاہے۔ ہیروئن سے تو کچھ بھی نہیں ملتا صرف آٹھ پہر کی غلامی ملتی ہے۔ ابتدا میں شعلہ سا بھڑکتا ہے اور پھر بس دھواں سا اُٹھتا رہتا ہے۔ ہیروئن سارے کس بل نکال دیتی ہے۔ ابتدائی چند دن گزرنے کے بعد ہیروئن استعمال کرنے سے کوئی لذت، کوئی سرور اور کوئی ’’فائدہ ‘‘ محسوس نہیں ہوتا۔ نشہ باز مقدار بڑھاتا ہے لیکن نتیجہ صفر ہی رہتا ہے۔

* آج کل کون سا نشہ عام ہے اور کیوں؟
چرس یا شراب سے ہیروئن پینے کا حوصلہ ملتا ہے۔ پھر مریض ہیروئن پر آ کر ٹھہر جاتے ہیں۔ کیونکہ اس سے بڑا نشہ پاکستان میں ہے ہی نہیں۔ گزشتہ کئی سالوں سے ہیروئن نے ہر قسم کے نشہ بازوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے اور ایک اندازے کے مطابق ہر دس منٹ بعد کوئی نہ کوئی نشے کا مریض ہیروئن پر شفٹ ہو رہا ہے۔ ایک دفعہ ہیروئن کو اپنانے کے بعد کوئی بھی واپس پرانے نشے پر نہیں جا سکتا۔ ہیروئن کا استعمال کرنے والے سبھی لوگ یا تو پہلے ہی نشے کے مریض ہوتے ہیں یا جلد ہی مریض بن جاتے ہیں۔

*کیا نشے کے کوئی فائدے بھی ہیں؟
ویسے تو عام طور پر کہا جاتا ہے کہ نشہ بہت بڑی لعنت ہے۔۔۔۔۔ لیکن دنیا میں نشے کا فائدہ مند استعمال بھی ہو رہا ہے۔ سرجیکل آپریشنز، زچگی، کینسر اور دیگر جسمانی تکلیفوں میں نشے کا استعمال ایک نعمت ہے۔ امریکہ، یورپ اور دیگر ممالک میں اب اگر مریضوں میں مارفین کا استعمال نہیں کیا جاتا تو اس کی وجہ یہ ہے کہ اس کی نعم البدل ادویات انہوں نے خود تیار کر لی ہیں تاکہ ان کا ذرمبادلہ پاکستان میں نہ آئے۔ ہماری سادگی دیکھیئے طبی استعمال کیلئے مارفین چھوڑ کر ان کی ادویات استعمال کر رہے ہیں۔ اس طرح تمام مارفین کو نشے کے مریضوں کیلئے چھوڑ دیا گیا ہے۔
 

 

Contact Us

Got a question ? Write it down, right here; and we will reply within 24 hours.


Dear Dr. Sadaqat Ali,