پاکستان کرکٹ ٹیم کے بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور نے قومی ٹیم کے اوپننگ بیٹسمین احمد شہزاد کو ماہر نفسیات سے رجوع کرنے کا مشورہ دیدیا ہے،ان کا کہنا تھا کہ احمد شہزاد کو درپیشبیٹنگ کے مسائل نفسیاتی نوعیت کے ہیں،فہیم اشرف اور حسن علی میں آل رانڈر بننے کی صلاحیت موجود ہے لیکن صرف تھوڑی محنت کیضرورت ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ ٹیم کے بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور نے قومی ٹیم کے اوپننگ بیٹسمین احمد شہزاد کو ماہر نفسیات سے رجوع کرنے کا مشورہ دیا ہے۔گرانٹ فلاور جو وقار یونس اور اب مکی آرتھر کے ساتھ کام کررہےہیں، وہ پاکستان کے اکثر بیٹسمینوں کے بارے میں اچھی طرح جانتے ہیں، اس لئے انہوں نے احمد شہزادکو ماہر نفسیات سے رجوع کرنے کا مشورہ دیا ہے کیونکہ ان کی بیٹنگ کے مسائل نفسیاتی نوعیت کے ہیں۔

احمد شہزاد اس وقت خراب بیٹنگ فارم سے دوچار ہیں اور انہیں پاکستانی ٹیم میں جگہ برقرار رکھنا مشکل ہے۔پاکستان سپر لیگ کے ڈرافٹ میں احمد شہزاد پلاٹینیم کٹیگری میں تھے، لیکن انہیں پلاٹینیم اور ڈائمنڈ کٹیگری میں کسی ٹیم نے نہیں لیابلکہ ملتان سلطان نے گولڈ کٹیگری میں منتخب کیا۔احمد شہزاد گزشتہ 2 سال سے کوئٹہ کی ٹیم کا حصہ تھے، لیکن انہیں کوئٹہ نے اس سال ریلیز کر دیا ہے۔دائیں ہاتھ کے اوپنر سری لنکا کی ون ڈے اور ٹی 20 سیریز میں بھی ناکام رہے تھے، بنگلہ دیش پر یمیئر لیگ میں احمدشہزاد کو کسی ٹیم نے نہیں لیا ہے۔گرانٹ فلاور کا یہ بیان بہت اہم ہے کیونکہ گزشتہ سال ورلڈ ٹی20 کے بعد وقار یونس نے احمد کے بارے میں جو رپورٹ دی تھی، اس میں بھی گرانٹ فلاور کی رائے شامل تھی۔

Courtesy: جاوید چودھری ڈاٹ کام