Courtesy: اردو پوانٹ

خسرہ ایک موذی مرض ہے جس کے تدارک کے لئے بر وقت حفاظتی اقدامات نا گزیر ہیں۔وویمن میڈیکل آفیسر ڈاکٹر سدرہ اسلم نے بی ایچ یو حویلی مجوکہ میں خسرہ سے بچاو مہم کے حوالہ سے منعقدہ آگاہی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئیکہا کہ اس موزی مرض کے حوالہ سے تھوڑی سی غفلت اور لاپرواہی جان لیوا ہو سکتی ہے اس لئے ضروری ہے کہ بچوں کی پیدائش کے بعد خسرہ سے حفاظتی ٹیکے ضرور لگوانے چاہیں اور بعد میں سپلیمنٹری ڈوز بھی لیتے رہنا چاہیے۔

نشے سے نجات کیلئےایک دُکھی دل کی پکار “یہ دھواں کھا گیا ، میری روح کو، میرے چین کو ” گلوکار سلطان بلوچ کا سلگتا ہوا نغمہ ، دلگداز آواز، دل کو چھو لینے والی دھن روح کو تڑپا دینے والے بول – ولنگ ویز پروڈکشن

انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب کی ہدایات کی روشنی میں 15 اکتوبر سے 27 اکتوبر تک اینٹی خسرہ مہم شروع کی جا رہی ہے جس کی کامیابی کے لیے معاشرہ کے تمام مکاتب فکر کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔دریں اثنا بی ایچ یو حویلی مجوکہ سے واک کا اہتمام بھی کیا گیا جس میں محکمہ صحت کے ڈاکٹرز’ پیرا میڈیکل سٹاف اور دیگر نے شرکت کی۔