Courtesy: اردوپوانٹ

سعودی مملکت میں ایک دفعہ پھر بین الاقوامی موسیقی کی منفرد تقریب ہونے جا رہی ہے۔ موسیقی کی یہ تقریب شاہ عبدالعزیز انٹرنیشنل کلچرل سنٹر ’اثراء‘ میں منعقد ہو گی۔ ہندوستانی موسیقار 14 نومبر سے 17 نومبر 2018ء تک سعودی عوام اور غیر مُلکیوں کومختلف سازوں کی پرفارمنس سے محظوظ کریں گے۔ اثرء سنٹر کے تعلقاتِ عامہ کے انچارج ڈاکٹر اشرف فقیہ نے بتایا کہ اس میوزیکل شو میں مختلف روایتی ساز استعمال کیے جائیں گے۔

نشے سے نجات کیلئےایک دُکھی دل کی پکار “یہ دھواں کھا گیا ، میری روح کو، میرے چین کو ” گلوکار سلطان بلوچ کا سلگتا ہوا نغمہ ، دلگداز آواز، دل کو چھو لینے والی دھن روح کو تڑپا دینے والے بول – ولنگ ویز پروڈکشن

مشہور موسیقار ابیل مینگنیر ہندوستانی موسیقی کا تعارف پیش کریں گے۔ اثراء سنٹر کو مذکورہ پروگرام کے حساب سے ڈیزائن کیا جا رہا ہے۔ کیونکہ اس موسیقی کے پروگرام میں 36 ممتاز موسیقار اپنے ساز بجائیں گے۔ ان سازندوں کے لیے 36 کھڑکیاں بنائی جا رہی ہیں۔ ہر کھڑکی میں ایک سازندہ اپنے ساز کے ساتھ موجود ہو گا۔ ڈاکٹر اشرف فقیہ نے مزید بتایا کہ اثراء سنٹر نے سعودی عوام کو دُنیا کے مختلف ممالک کی ثقافت اور موسیقی کی روایت سے رُوشناس کرانا ہے۔

اس مقصد کے تحت اس سنٹر میں امریکی، جرمنی، مراکشی، فرانسیسی، ہندوستانی، عراقی، جاپانی ، آسٹریائی اور رُوسی فنکاروں کو بھی مدعو کیا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ 2019ء میں عرب تاریخ کا سنٹر کی جانب سے اپنا تیار کردہ تھیٹر بھی پیش کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی اعتدال پسند پالیسیوں کے باعث آج سعودی مملکت قدامت پرستی کے صدیوں پُرانے ماحول سے باہر آ کر جدید دُنیا کے ہم قدم رواں دواں ہے۔ 35 سالوں بعد مملکت میں قانونی طور پر سینما تھیٹرز عوام کی تفریح کی خاطر کھُل گئے ہیں۔ سعودی تاریخ میں گزشتہ سال اور اس سال کے دوران بھی کئی بین الاقوامی فنکاروں اور گلوکاروں نے اپنے کانسرٹس سے عوام کو خوب محظوظ کیا ہے۔