وہ کہاں کہاں سے گزر گیا !

(ڈاکٹر صداقت علی)

یہ گھر سے بھاگنے والے نوجوان کی کہانی ہے جو کہ آپ یہاں پڑھ سکتے ہیں۔ اسے پڑھتے ہوئے آپ خود کو مرکزی کردار کی جگہ رکھیں گے۔ پہلے چیپٹر میں ایک نوجوان اپنے گھر سے بھاگ کھڑا ہوتا ہے۔ کہانی جب جب اہم موڑ پر پہنچتی ہے تب تب اُسے اپنی بقا کیلئے اہم فیصلہ کرنا ہوتا ہے جو کہ کسی بھی نوجوان، جو سڑکوں پر زندگی بسر کر رہا ہے کو کرنے پڑتے ہیں: کیا اُسے کھانا کوڑے سے اٹھا کر کھانا پڑے گا؟ کیا وہ کسی کو لوٹے گا؟ کیا وہ جسم فروشی سے اپنا پیٹ پالے گا؟ اس کہانی کو آپ خود آگے بڑھائیں گے، آپ سمجھ لیں کہ آپ ہی گھر سے بھاگنے والے نوجوان ہیں! اور اس مہم جوئی کے دوران بہت نازک لمحات آتے ہیں جب آپ کو اپنی کھال بچانے کیلئے مشکل فیصلے کرنے پڑتے ہیں۔ آپ سوچتے ہیں کہ میں کیا کروں؟ کدھر جاؤں؟ سوچتے ہیں کہ اپنی عزت نفس بیچ دوں؟ کیا اپنا جسم بیچ دوں؟ ہر ٹرننگ پوائنٹ پر ایک کلک کی مدد سے آپ ایک نئی کہانی دریافت کرتے ہیں۔

ہر کلک ایک نیا تجربہ سامنے لاتی ہے۔ ایک نئی کہانی، نئے حالات نئی پیچیدگیاں اور پھر آپ کرتے ہیں ایک اور فیصلہ اور جو آپ کی بے چینیوں کو راستہ دیتا ہے۔ آپ جو کلکس چنتے ہیں انہی سے نئی سے نئی کہانیاں پرت در پرت کھلتی چلی جاتی ہیں۔ ممکنہ طور پر نت نئے موڑ لے کر آپ کے سامنے کئی کہانیاں آتی ہیں۔ ہر فیصلہ ایک نئی دنیا میں لے جائے گا، نئے تجربات سامنے آئیں گے اور نئی مشکلات اس کے ساتھ جڑ جائیں گی اور پھر چند قدم آگے چل کر نئی مشکل کے پیشِ نظر ایک اور فیصلہ کرنا ہو گا۔ کہانی کیسے آگے بڑھتی ہے اس کا انحصار آپ کے فیصلوں پر ہے، یہ فیصلے آپ کو بیس سے زیادہ ممکنہ انجام تک پہنچا سکتے ہیں۔آپ کو خود کو کہانی کے مرکزی کردار کی جگہ رکھ کر سوچنا ہو گا۔

جب آپ ایک کہانی کے انجام تک پہنچتے ہیں اور آپ کا سامنا ایک دردناک صورت حال سے ہوتا ہے جیسے کہ بھوک پیاس، بے عزتی، استحصال اور نشے کی بیماری میں اوور ڈوز سے آپ کو موت سامنے نظر آتی ہے یا معلوم نہیں ہوتا ہے کہ رات کو سر پر صرف آسمان کی چھت ہو گی تو آپ کو گھر، ماں باپ اور بہن بھائی سب یاد آنے لگتے ہیں ایسے میں آپ واپس شروع میں جا کر سوچتے ہیں کہ اگر آپ کوئی مختلف فیصلہ کرتے تو کیا ہوتا، آپ اطمینان کا سانس لیتے ہیں۔ معاملات پر نظر ثانی کی آسانی اور سہولت اُن لڑکوں اور لڑکیوں کو قطعی حاصل نہیں ہوتی جو سوچے سمجھے بنا گھر سے بھاگ اُٹھتے ہیں۔

نوجوانوں کے گھر سے بھاگنے کے موضوع پر ڈاکٹرصداقت علی کی ویڈیو دیکھنے کیلئے اس لنک پر کلک کیجئے۔

کیا آپ کے دل میں بھی گھر سے بھاگ جانے کا شوق انگڑایاں لیتا رہتا ہے؟ ہاتھ بڑھائیے اور کلک کیجئے۔

لنک1بھاگ پپو بھاگ!